مردوں والی بات

ایک کسان اپنے کھیت میں ہل جوت رہا تھا۔ ایک گیدڑ نے دیکھ کر پوچھا۔ "تم کیا کر رہے ہو؟”

کسان نے کہا۔ "میں فصل تیار کر رہا ہوں۔”

گیدڑ نے کہا۔ "جب فصل تیار ہوگی تو میں فصل اُجاڑ دوں گا۔”

کسان نے کہا۔ "میں کھیتوں کے گرد باڑھ لگا دوں گا۔”

گیدڑ بولا۔ "میں باڑھ کے نیچے سے اندر داخل ہوجائوں گا۔”

کسان بولا۔ "میں فصل کے گرد دیوار کھڑی کر دوں گا۔”

"پھر تم اندر کیسے جائوگے؟” گیدڑ نے پوچھا۔

کسان پریشان سا ہوگیا اور کچھ دیر بعد سوچنے کے بعد بولا۔

"میں دیوار میں ایک دروازہ بنائوں گا اور دروازے کے باہر چارپائی پر بیٹھ کر خود کھیت کی حفاظت کروں گا۔”

گیدڑ بولا۔ "جب تم سو جائوگے تو میں کھیت میں داخل ہوجائوں گا اور تمھاری فصل کو تباہ کر دوں گا۔”

اچانک کسان کو یاد آیا کہ گیدڑ کتے سے بہت ڈرتا ہے۔ چناچہ اس نے فوراً کہا۔

"میں کھیت کی حفاظت کے لیئے کتا پال لوں گا۔”

یہ سن کر گیدڑ کا رنگ اُڑ گیا اور وہ بولا۔

"برادر! پھر تو یہ مردوں والی بات نہ ہوئی ناں۔”