منسوخ کر دیجیئے

ایک مشہور رسالے کے دفتر ایک صاحب کا خط آیا جس میں لکھا تھا۔

"میری بیوی نے مجھ سے علیحدگی کا پختہ ارادہ کر لیا تھا، مگر آپ کے رسالے میں اس نے طلاق کے نقصانات پر ایک مضمون پڑھ کر اپنا ارادہ بدل دیا۔ برائے کرم میری سالانہ خریداری منسوخ کر دیجیئے۔”