فریبی کہیں کا

ایک حسین و جمیل سیکریٹری غصے سے بھری باس کے کمرے سے باہر نکلی۔ ساتھی ورکر نے پوچھا۔ "جب تم اندر گئی تھیں تو بڑے خوشگوار موڈ میں تھیں اب غصے سے بھری واپس آئی ہو، آخر کیا بات ہے؟”

سیکریٹری نے ناک سکیڑتے ہوئے جواب دیا۔ "اس نے مجھ سے پوچھا کہ کیا مجھے فرصت ہے تو میں نے کہا فرصت ہی فرصت ہے۔ میری بات سن کر کمبخت نے مجھے چالیس صفحے ٹائپ کرنے دے دیئے۔ فریبی کہیں کا۔”