تربوز ۔ غذائیت سے بھرپور پھل

گرمیوں کا پھل تربوز نہ صرف جسمانی صحت کیلئے اچھا ہے بلکہ اس سے موسم گرما میں پیاس کو کم کرنے اور جسم میں پانی کی کمی کو پورا کرنے میں بھی مدد ملتی ہے۔ طبی ماہرین نے کہا ہے کہ تربوز دل و دماغ کو تقویت دیتا ہے جبکہ اس میں وٹامن اے، بی اور وٹامن سی کی کافی مقدار موجود ہوتی ہے۔

اس کے علاوہ تربوز میں فائبر، پوٹاشیم اور فاسفورس بھی پایا جاتا ہے۔ تربوز میں موجود وٹامنز جگر کیلئے بھی انتہائی مفید ہیں۔ تربوز میں ۹۲ فیصد پانی موجود ہوتا ہے اور اس کا زیادہ استعمال چربی کم کرنے اور موٹاپے پر قابو پانے میں معاون ثابت ہوتا ہے۔ ماہرین صحت نے کہا ہے کہ تربوز کے بیج جلد، شوگر اور دل کیلئے بے حد مفید ہیں یہ دل میں خون کے بہاﺅ کو بہتر بنانے اور دل کے پٹھوں کو طاقت دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گرمیوں کا پھل تربوز قدرت کی جانب سے انسان کیلئے کسی عطیہ سے کم نہیں ہے اور اس کا زیادہ سے زیادہ استعمال انسانی صحت کیلئے انتہائی مفید ہے۔

غذائی خصوصیات سے لبریز تربوز آپ کو تندرست اور چاق وچوبند رکھنے میں مدد دیتا ہے۔ آیئے اس کے اہم فواید جانتے ہیں۔

۔ اس پھل میں فلیونائیڈز، کیروٹینائیڈز اور ٹرائی ٹر پیونائیڈز پائے جاتے ہیں جو کہ معدے کی تیزابیت کے لئے بہت مفید ہیں اور اگر آپ اسے روزانہ کھائیں تو آپ کو سینے کی جلن اور معدے کی تیزابیت سے نجات مل جائے گی۔

۔ اس پھل میں وٹامن سی کی بہت زیادہ مقدار پائی جاتی ہے جس سے انسان کی جلداور نظر بہت اچھی رہتی ہے۔

۔ ایسے لوگ جن کا وزن زیادہ ہو انہیں چاہیے کہ وہ تربوز کھائیں کیونکہ اس کے استعمال سے انسان کا پیٹ جلد بھر جاتا ہے اور کھانے کی خواہش کم ہوتی ہے جو وزن کی کمی میں اہم کردار ادا کرتی ہے۔

۔ تربوز میں فائبر کی اچھی مقدار پائی جاتی ہے جس کی وجہ سے یہ نظام انہضام کے لئے بہت مفید ہے۔

۔ تربوز میں موجود لائی کوپین نامی اجزا دل کے امراض کے لیے انتہائی مفید ہیں اور ایک تحقیق سے یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ اس کے استعمال سے دل کے امراض کو کم کیا جاسکتا ہے۔

۔ پانی کی کمی یا اس کے نتیجے میں ہونے والی بیماریوں کے لیے تربوز انتہائی فائدہ مند ہے جو جسم میں پانی کی کمی کو پورا کرنے کے ساتھ غذائیت بھی فراہم کرتا ہے۔

۔ تربوز جگر اور مثانے کی گرمی مکمل طور پر ختم کر دیتا ہے۔ اس کے علاوہ گردے اور مثانے کی پتھریوں کو بذریعہ پیشاب اپنے ساتھ کھینچ کر باہر لے آتا ہے۔

۔ تربوز اپنی ٹھنڈک اور مزاج کی وجہ سے گرمی کے بخاروں میں خاص طور پر فائدہ کرتا ہے۔ بخار کی وجہ سے ہونے والی دل کی گھبراہٹ، بے چینی اور جسم سے گرمی کی حدت کو ختم کرتا ہے۔ بخار کے اندر تربوز کا جوس پلانا بہت مفید ہے کیونکہ تربوز کے اندر گلوکوز وافر مقدار میں پایا جاتا ہے۔اس لئے یہ فوری طور پر جسم کو توانائی بخشتاہے اور پیاس کی شدت جو بخار کی وجہ سے ہوتی ہے، ختم کرتا ہے۔

۔ تربوز کے آزمودہ فوائد میں بالوں کے مسائل کا حل بھی موجود ہے، اس میں پایا جانیوالا وٹامن اے جلد کے لیے بہت مفید ہے لہٰذا صرف تربوز کا ایک کپ وٹامن اے کی روزمرہ کی ضرورت کو پورا کرتا ہے جب کہ تربوز بالوں کو بھر پور موسچرائزر بھی فراہم کرتا ہے۔

۔ تربوز پیٹ اور معدے کی سوزش اور جلن ختم کرنے والا بہترین پھل ہے ۔اس کے کھانے سے معدے اور آنتوں کے زخم (السر) مندمل ہو جاتے ہیں۔ اس میں بہی (سفرجل) کی طرح Pectin کی موجودگی اسہال اور پیچش میں مفید ہے۔

ماہرین کے مطابق کسی چیز کی زیادتی بھی بری اور کمی بھی، یہی معاملہ تربوز کے ساتھ بھی وابستہ ہے لہٰذا تربوز کا مناسب مقدار میں استعمال ہی فوائد کا حامل ہے، بے وقت اور زیادہ مقدار میں کھانے سے ہیضہ اور پیٹ کے دیگر مسائل مشکل میں ڈال سکتے ہیں۔

 

نوٹ: یہ مضمون عام معلومات کے لیے ہے۔ قارئین اس حوالے سے اپنے معالج سے بھی ضرور مشورہ لیں۔