معدے کی جلن اور تیزا بیت ختم کرنے کے آسان طریقے

آج کل معدے کی جلن کی شکایت عام ہے اور لوگ معدے کے علاج کےلیے بھاری بھاری رقوم خرچ کرتے ہیں۔ اس مسئلے کو سادہ اور آسان طریقہ سے حل کرنے کیلئے مندرجہ ذیل تدابیر اختیار کی جاسکتی ہیں۔

سب سے پہلے تو یہ معلوم کریں کہ آپ کو کن غذاﺅں کی وجہ سے جلن اور تیزابیت کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ عام طور پر مصالحہ دار غذائیں، ترش پھل، چائے کافی اور چکنائی والی غذائی اس مسئلے کا سبب بنتی ہیں، پنیر اور تلی ہوئی اشیاءسے پرہیز کریں اور کم چربی والا گوشت اور پھل سبزیاں استعمال کریں۔

وزن کم کریں کیونکہ معدے کے گرد جمع ہونے والا وزن تیزابیت کو اوپر کی جانب منتقل کرتا ہے۔ کھانا کم مقدار میں زیادہ دفعہ کھائیں اس طرح معدے میں تیزابیت کی مقدار کم ہوجاتی ہے۔

تیزابیت ہوجانے کی صورت میں مندرجہ ذیل اقدامات کریں:

٭ چائے، کافی اور کولڈ ڈرنگ کا استعمال بند کردیں۔

٭ روزانہ نیم گرم پانی کا ایک گلاس پئیں۔

٭ کیلے، تربوز اور کھیرے کو روز مرہ غذا کا حصہ بنائیں۔

٭ تربوز کا جوس بھی بہت مفید ہے۔

٭ ناریل کا پانی بھی تیزابیت کم کرتا ہے۔

٭ روزانہ ایک گلاس دودھ پئیں۔

٭ رات کا کھانا سونے سے دو یا تین گھنٹہ پہلے کھالیں۔

٭ کھانوں کی مقدار مختصر اور درمیانی وقفہ محدود رکھیں۔

٭ کھانا باقاعدگی سے کھائیں۔

٭ اچار، مصالحے دار چٹنی اور سرکے سے پرہیز کریں۔

٭ لونگ کو کچھ دیر چوسنے سے بھی افاقہ محسوس ہوگا۔

٭ گڑ، لیموں، کیلا اور بادام معدے کی جلن اور تیزابیت میں فوری افاقہ دینے کیلئے مشہور ہیں۔

٭  معدے کی سوزش میں تازہ ادرک کا استعمال مفید ہے۔ کھانے کے دوران بھی  ادرک کا استعمال کیا جانا چاہیے۔

٭ سونف میں آکسائیڈ کی مقدار 6,9 پوائنٹ ہوتی ہے۔ اس لیے اسے معدے کے علاج کے لیے بہت مفید سمجھا جاتا ہے۔

٭ اخروٹ میں چکنائی کو پگھلانے کی غیرمعمولی طاقت ہوتی ہے۔  اخروٹ کا استعمال نظام انہضام کو بھی بہتر بنانے میں مدد دیتا ہے۔

٭ انناس بھی خوراک کو ہضم کرنے میں مدد دیتے ہیں۔ کھانے کے فوری بعد آپ انناس کا استعمال کرسکتے ہیں۔

٭ لہسن کو شہد میں ملا کر پینے سے بھی معدے کی جلن میں کمی جاسکتی ہے۔