آلو بخارا ۔ صحت اور غذائیت کا خزانہ

آلو بخارا کے فائدے شمار کرنا ممکن نہیں۔ یہ ایک ایسا پھل ہے جو اپنے اندر بے انتہا طبی فوائد رکھتا ہے۔ یہ ایک اینٹی آکسیڈینٹس سے بھرپور پھل ہے۔ اس میں پروٹین، کیلشیم، فاسفورس، آئرن، نشاستہ دار اجزا، وٹامن اے، بی اور سی کافی مقدار میں پائے جاتے ہیں۔

انسانی معدہ اس کو دو سے تین گھنٹوں میں ہضم کر لیتا ہے۔ گرم مزاج لوگوں، بیماری کے بعد کمزور ہو جانے والے لوگوں اور حاملہ خواتین کے لیے یہ ایک انمول نعمت ہے۔ جبکہ اس میں موجود وٹامن بی6 ہمارے عصبی نظام کو مضبوط بناتا ہے۔ اس کے باقاعدہ استعمال سے کولیسٹرول کو بھی کافی حد تک کنٹرول کیا جا سکتا ہے۔ دماغ کے لیے یہ ایک بہترین ٹانک ہے۔ بد مزاج لوگوں کے لیے بھی بیحد مفید غذا ہے۔ کیونکہ اس کے استعمال سے مزاج خوشگوار ہو جاتا ہے۔

انٹی آکسیڈینٹس سے بھرپور

ہمارے جسم پر مختلف طرح کے جراثیموں کا حملہ جاری رہتا ہے اور کمزور مدافعتی نظام کی وجہ سے بیماریاں لاحق ہونے لگتی ہیں لیکن اگر انٹی آکسیڈینٹس جیسے فلیونائڈز ہمارے جسم میں موجود ہوں تو بیماریوں سے بچاجاسکتا ہے۔اچھی خبر یہ ہے کہ آلوبخارے میں انٹی آکسیڈینٹس کی تعداد بہت زیادہ ہوتی ہے جس کی وجہ ہمارا جسم بیماریوں سے محفوظ رہتا ہے۔

نظام انہضام میں بہتری

آلو بخارے میں وٹامن کے،کاپر، پوٹاشیم، کوینک ایسڈاور سوربی ٹول کی بھرپور مقدار ہوتی ہے جو کہ ہمارے معدے اور انتڑیوں کو مضبوط کرتا ہے۔ اس کے استعمال سے ذیابیطس سے محفوظ رہاجاسکتا ہے اور اس کی وجہ سے قبض جیسی مشکل سے بھی نجات ملتی ہے۔

دل کی مضبوطی

آلو بخارے کے استعمال سے خون میں کولیسٹرول کی مقدار ٹھیک رہتی ہے اور اس کی وجہ سے LDL(خطرناک کولیسٹرول) کم ہوتا ہے جس کی وجہ سے دل کی شریانیں مضبوط ہوتی ہیں اور یہ کھلتی ہیں۔

دماغ کی مضبوطی

آلوبخارے کا جوس پینے سے دماغی صحت میں اضافہ ہوتا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ آلوبخارے میں موجود فینولز کی وجہ سے دماغی استطاعت بڑھتی ہے۔ بڑھتی ہوئی عمر کی وجہ سے دماغی استطاعت میں کمی واقع ہوتی ہے لیکن آلو بخارے کی وجہ سے اسے کم کیا جاسکتا ہے اور دماغ بہتر طریقے سے کام کرتا ہے۔

انتڑیوں کے لئے

اگر آپ پیٹ کی بیماری کا شکار ہوتے ہیں تو آلو بخارا کھانے سے اس سے بچا جاسکتا ہے۔ آلو بخارا ایسے بیکٹیریا کو ختم کرتا ہے جو ہمارے پیٹ اور انتڑیوں کو نقصان پہنچاتے ہیں۔

گردے اور پتے کی پتھری

اگر آپ اپنے پتے میں پتھری بننے سے روکنا چاہتے ہیں، تو آلو بخارا روزانہ کھانا اپنا معمول بنا لیں۔ اگر اس کا موسم نہ ہو تو خشک آلو بخاروں کو ہی بھگو کر استعمال کر لیا کریں۔ اس عمل سے تو بعض اوقات پتے میں موجود پتھری بھی پگھل کر نکل جاتی ہے۔ جبکہ یہ گردے اور مثانے کی پتھری کو بھی توڑ دیتا ہے۔

آپ چاہیں تو آلو بخارے کو تازہ کھاسکتے ہیں یا خشک کیونکہ یہ دونوں صورتوں میں ایک جیسا مفید پایا جاتا ہے۔ اس کا جوس استعمال کرنے میں بھی کوئی قباحت نہیں کیونکہ یہ ہر صورت میں آپ کو فائدہ دے گا۔

ماہرین کے مطابق خشک آلو بخارے کا استعمال آپ کو آنتوں کے کینسر سے بچاتا ہے۔ اس میں کچھ ایسے اینٹی آکسیڈینٹس پائے جاتے ہیں جو کینسر کے خطرات کو ناصرف کم کرتے ہیں بلکہ کینسر ہونے کی صورت میں اس مرض کے علاج میں بہتری آ جاتی ہے۔

جبکہ بلڈ کینسر کے مرض میں بھی اس کا استعمال بیحد مفید ہے۔ یہاں تک کہ اگر کینسر ابتدائی مرحلے میں ہو تو، صرف اس کے باقاعدہ کھانے سے ہی ٹھیک ہو جاتا ہے۔

وہ لوگ جو گردے کے مریض ہیں یا وہ جن کو پیشاب رک رک کر آتا ہو، ان کے لیے آلو بخارے کا استعمال اکسیر ہے۔