وہ غلطی جو آپ کا چہرہ بے رونق کر سکتی ہے

چہرے کو روزانہ صبح و شام دھونا جلد کی دیکھ بھال کے بنیادی اصولوں میں سے ہے۔ تاہم نہانے کے دوران ایسا کرنا جلد کو برباد کر کے چہرے کو بے رونق بنا دیتا ہے۔

ماہرین نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ چہرے کو "شاور” کے نیچے اسی درجہ حرارت کے پانی سے دھونا جس کو ہم جسم کے لیے استعمال کرتے ہیں یہ ایک بہت بڑی غلطی ہے۔ اس کی وجہ سے گالوں میں موجود بال جیسی باریک خون کی نالیاں کمزور پڑ جاتی ہیں اور چہرہ غیر پرکشش ہو جاتا ہے۔ یہ عمل اپنے طور پر جلد کو درپیش کسی دوسرے مسئلے میں اضافہ بھی کر سکتا ہے، ان میں جھریوں کا ہونا شامل ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ "اگرچہ ہم میں سے بہت سے لوگ سمجھتے ہیں کہ شاور کے پانی کے نیچے سر کو ہلانے کے ساتھ چہرہ دھونے سے بہت صاف ستھری جلد کا مالک بنا جاسکتا ہے… تاہم پانی کی گرمی اور دباؤ درحقیقت یہ دونوں چیزیں جلد کو شدید نقصان پہنچاتی ہیں۔

امراض جلد کے ماہر ڈاکٹروں کا اس بات پر اتفاق ہے کہ گرم پانی سے چہرے کی حفاظت کرنے والا قدرتی روغن ختم ہو سکتا ہے جس کا نتیجہ شریانوں کے پھول جانے اور اس کے بعد چہرے کے سرخ ہوجانے کی شکل میں سامنے آتا ہے۔

جلد کی حفاظت کے لیے چہرے کو دھونے کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ چہرے کو واش بیسن میں دھویا جائے اور ساتھ ہی اس بات کا بھی خیال رکھا جائے کہ نل کا پانی گرم نہ ہو بلکہ نیم گرم (ہلکا گرم) ہو۔

اگر ہم اس بات کا خیال رکھیں گے کہ فیشل کلینسر کو اتارنے کے لیے ہمارا چہرہ براہ راست پانی کے بہاؤ کے سامنے نہ آئے تو ہم اپنی جلد کو نقصان سے بچانے میں کامیاب رہیں گے۔

ماہرین نے ہدایت کی کہ ” اگلی مرتبہ چہرہ دھونے کے لیے آپ پورے اعتماد کے ساتھ واش بیسن کا رخ کیجیے … اور اپنے صبح کے روٹین میں تین سے پانچ منٹ کا اضافہ کیجیے تاکہ صاف ستھری اور روشن جلد کا لطف اٹھا سکیں”۔