رمضان میں رکھیں جلد کو تروتازہ اور صحت مند

اِس سال بھی رمضان کا مہینہ اپنی تمام تر برکتوں کے ساتھ شروع ہوچکا ہے۔ لیکن پچھلے سال کی طرح اِس سال بھی گرمی کافی شدید ہے اور یہ گرمی آپ کی نازک جلد کے لئے بالکل بھی مفید نہیں۔ اور روزہ رکھنے کے دوران پانی سے لمبا وقفہ بھی جلد میں سوکھا پن پیدا کر دیتا ہے۔ جس سے جلد اور خشک ہو جاتی ہے۔

انہی مسائل کو مدِ نظر رکھتے ہوئے آج ہم آپکو کو چند آسان اور مفید طریقے بتائیں گے جو رمضان میں بھی آپکی جلد کو اور دلکش رکھنے میں مدد دیں گے۔

افطار اور سحر

اِس بات کو یقینی بنائیں کہ سحر اور افطار کے وقت آپ پانی زیادہ مقدار میں پیئیں۔ تھوڑے تھوڑے وقفے سے دونوں اوقات میں زیادہ پانی پینا اِس بات کی ضمانت ہے کے جسم میں پانی کی مقدار ضرورت کے مطابق ہے۔ تقریباً 8 گلاس تک روزانہ پانی پینا ویسے بھی صحت کی ضمانت ہے۔

دودھ کی مصنوعات سے پرہیز

اگر آپکی جلد زیادہ حساس اور چکنائی والی ہے، تو آپ کو چاہیئے کے آپ دودھ والی مصنوعات سے پرہیز کریں کیوں کے اِس سے آپ کے چہرے پر دانے اور کیل مہاسے اُبھر آئیں گے۔

سوفٹ ڈرنکس اور کیفین سے پرہیز

رمضان کے مہینے میں اپنی جلد کو صحت مند اور دلکش رکھنے کے لئے یہ بھی ضروری ہے کے آپ سوفٹ ڈرنکس، چائے اور کافی سے بھی پرہیز کریں کیوں کے اِس سے جسم میں موجود منرلز کی کمی ہو جاتی ہے جس سے آپ کی جلد خشک اور کھردری ہو جاتی ہے۔

زیادہ میٹھے سے پرہیز

رمضان کے مہینے میں لوگ افطاری کے وقت میٹھے کا بھی بے تحاشہ استعمال کرتے ہیں جو بالکل بھی فائدہ مند چیز نہیں ہے۔ بہت زیادہ میٹھا بھی جلد پر داغ دھبوں اور کیل مہاسوں کے باعث بنتا ہے۔

آنكھوں کے گرد حلقوں سے نجات

رمضان کے مہینے میں پانی کی کمی کی وجہ سے ہماری آنكھوں کے ارد گرد ہلکے بھی پڑ جاتے ہیں جو تھوڑی سی احتیاط اور توجہ سے ٹھیک کئے جا سکتے ہیں۔ پُورا رمضان دن میں 2، تِین مرتبہ ٹی بیگ کو آنکھوں پر رکھنے سے یہ سیاہ ہلکے ختم کئے جا سکتے ہیں۔

سبزیوں اور سلاد کا استعمال

کوشش کریں آپ رمضان کے مہینے میں سبزیوں اور سلاد کا زیادہ سے زیادہ استعمال کریں۔ اِس سے آپکی جلد خصوصًا چہرے کی جلد بہت تروتازہ اور صحت مند رہے گی۔

سن سکرین اور سن بلاک کا استعمال

رمضان کے مہینے میں کوشش کریں کہ بازار اور مارکیٹ افطاری کے بعد جائیں لیکن اگر آپ دن میں بھی جاتے ہیں تو کوشش کریں چہرے پر سن بلاک یا اچھی سن سکرین لگا کر نکلیں۔ سن سکرین کا استعمال سورج کی نقصان دہ شعاعوں کو جلد پر اثر انداز ہونے سے کافی حد تک بچائے رکھتا ہے۔