نومولود بچوں کی دیکھ بھال

تجربہ کار بڑی بوڑھیوں کے کارآمد مشورے

  • بچے کے سر کا گول ہونا بہت ضروری ہے اور یہ کام پیدائش کے فورا بعد سے ہی کرنا ہوتا ہے۔ لہٰذا کروٹ سے ہرگز نہ لٹائیں اگر  لٹائیں تو تھوڑی ہی دیر میں سیدھا کر دیں ورنہ بچے کا سر لمبا ہوجائے گا۔ گول تکیہ کا استعمال کریں۔
  • دودھ پلانے کے بعد بچے کی گردن کو ہمیشہ صاف رکھیں۔ گردن کو کھولیں، بچے کو لٹاتے وقت سر کو سیدھا رکھنے کے ساتھ گردن کو تھوڑا پیچھے کی طرف لٹکائیں اور گردن کے نیچے کسی تولیے کو لمبائی میں رول کرکے رکھیں۔ اس سے گردن کُھل جائے گی اور ہوا بھی لگے گی۔ گردن کی لائنز میں آپ آرام سے بے بی پاؤڈر لگا ئیے۔ گردن کا کچا پن ختم ہو گا اور صراحی دار بھی ہوگی۔
  • بچے کو روزنہلائیے اور مالش کیجئے، ناخنوں اور ہاتھوں کی صفائی کا خاص خیال رکھیں۔ انگلیاں کھول کر میل صاف کریں۔ دن میں تین چار بار گیلے کپڑے سے ہاتھ اور منہ صاف کریں۔
  • نیپی تبدیل کرتے وقت بھی صفائی کا خیال رکھنا ضروری ہے۔ طہارت کرانے کے بعد ہر بار پیٹرولیم جیلی کو اچھی طرح لگائیں اس سے ریشز نہیں ہوں گے۔
  • اگر فیڈر استعمال کررہی ہیں تو دو معیاری قسم کی بوتلیں ہونی چاہیے یعنی دن اور رات کی الگ الگ۔ ان کو بوائل کرنا بھی ضروری ہے۔ بوتل کو فیڈر بیگ کے اندر رکھیں تاکہ وہ کچھ دیر گرم رہے۔
  • زیتون کے تیل سے روزانہ مالش کریں تاکہ ہڈیاں اور پٹھے مضبوط ہو اور خشکی بھی نہیں ہوگی۔
  • بچوں کو منہ یا ہونٹوں سے زیادہ مت لگائیں اس سے جلد کا انفیکشن بھی ہوسکتا ہے کیونکہ ان کی جلد نہایت نازک ہوتی ہے۔
  • اگر آپ بچے کو خود فیڈ کرواتی ہیں تو آپ کو دن میں چار مرتبہ دودھ پینے کی ضرورت ہے تاکہ کیلشیم کی کمی نہ ہونے پائے۔ ڈاکٹر کی ہدایت کے مطابق ملٹی وٹامن گولیوں کا استعمال بھی ضرور کرتی رہیں۔
  • بچوں کو مختلف اقسام کی خوشبو یا پاؤڈر لگانے سے بھی پرہیز کریں۔
  • ناک اور کان کو احتیاط سے کاٹن بڈ سے صاف کریں۔
  • قدرتی طور پر پیدائش کے وقت بچے کے جسم پر بال موجود ہوتے ہیں جن کو اگر صاف نہ کیا جائے تو وقت گزرنے کے ساتھ نہایت بدنما معلوم ہوتے ہیں ان کو صاف کرنے کے لیے لپڑی تیار کی جاتی ہے جس کی ترکیب یہ ہے:

    آٹا: تین چمچ۔
    گلیسرین: چار سے پانچ قطرے۔
    بادام کا تیل: چار سے پانچ قطرے:

    ان تمام اشیاء کو دودھ کی مدد سے مناسب درمیانی حد تک گوندھ لیں اور ہلکے نرم ہاتھ سے بچے کے چہرے اور جسم کو رگڑیں۔ تقریبا تین مہینے تک روزانہ اس عمل کو کرنے سے نہ صرف بال صاف ہو جائیں گے بلکہ رنگ و روپ اور چہرے کی رونق میں بھی اضافہ ہوگا۔ اس کے بعد نہلا دیں۔

  • اکثر بچوں کو گیس کی شکایت ہوجاتی ہے اس کے لیے کبھی کبھی کروٹ سے لٹائیں اور پیٹ پر کپڑے کو ہلکا گرم کرکے سکائی کریں۔
    ایک چٹکی سے بھی کم ہینگ کو ہلکے گرم پانی میں گھول کر ناف کے اردگرد لگادیں۔
  • مسوڑھوں پر سہاگا پاؤڈر ملنے سے دانت آسانی سے نکلتے ہیں۔
  • خود اچھی غذا کے ساتھ کیلے اور دودھ استعمال کریں۔ خاص طور پر بچے کو دودھ پلانے والی مائیں کھجور، انجیر اور مکھانے بھی دودھ کے ساتھ استعمال کریں۔
  • پیٹ کے کیڑے ختم کرنے کے لئے ایک چائے کا چمچ کلونجی ایک کپ پانی میں ابال کر چھان لیں اور ایک ہفتے تک روزانہ دو دو چمچ پلائیں۔