گرم موسم میں جلد کا نکھار

فاطمہ شہاب

گرم موسم میں سب سے زیادہ جلد ہی متاثر ہوتی ہے۔ گرم ہوائیں اور سورج کی تیز شعائیں جلد کو براہِ راست متاثر کرتی ہیں۔ بار بار چہرہ دھونے کے بعد موئسچرائزر استعمال نہ کیا جائے تو خشکی کا احساس پیدا ہوتا ہے، جبکہ صابن یا فیس واش کا استعمال چہرے کی قدرتی نمی کو کم کردیتا ہے۔ اے سی کی ہوا سے بھی جلد خشک ہوجاتی ہے جس سے چہرے ہر شکنیں ابھرنے لگتی ہیں۔ عام طور پر یہی خیال کیا جاتا ہے کہ گرمیوں میں جلد کو موئسچرائزنگ کی ضرورت نہیں پڑتی تاہم یہ خیال غلط ہے۔ گرمیوں میں چہرے کی جلد سے چکنائی کا اخراج زیادہ ہوجاتا ہے جس سے جلد کو موئسچرائزر کی زیادہ ضرورت ہوتی ہے۔ کوشش کرنی چاہیئے کہ آئل بیلیسنڈ موئسچرائزر استعمال کیا جائے جس کی بیس آئل کے بجائے پانی ہو۔ اگر آپ کی جلد آئلی ہے تو چہرہ دھونے کے بعد اس پر برف ملیں اور پھر ٹشو پیپر سے چہرہ خشک کرنے کے بعد موئسچرائزر لگائیں۔ موئسچرائزر لگانے کے بعد پھر سے برف ملیں اور بعد میں ٹشو کے ساتھ چہرے کی نمی کو جذب کرلیں۔ گرمیوں کے موسم میں جلد کو نمی فراہم کرنے اور چکنائی سے نجات دلانے کے لیئے بھاپ لینا بہت مفید ہے، بھاپ لینے کے عمل سے جلد میں موجود نقصان دہ چکنائی خارج ہوجاتی ہے۔ گرمیوں میں روزانہ چہرے پر ٹماٹر کا رس لگانا بھی اس کی قدرتی نمی برقرار رکھنے میں مدد دیتا ہے۔