بالوں کی خشکی ۔ آسان علاج

سر میں خشکی بہت عام ہوتی جارہی ہے جس کا نتیجہ تکلیف دہ خارش کی شکل میں نکلتا ہے۔یہ مسئلہ صرف خواتین تک محدود نہیں بلکہ مرد حضرات کو بھی اس کا سامنا ہوتا ہے اور اس سے بچنے کیلئے نت نئے شیمپوز کا استعمال کرتے ہیں۔اس کی بڑی وجہ سر کی جلد کے مردہ خلیوں کا بہت زیادہ اترنا ہے، جو ہیئر فولیکل کو بند کرنے کا باعث بنتی ہے۔عام طور پر اس کی وجہ بالوں کی صفائی کا زیادہ خیال نہ رکھنا یا جلدی مسائل ہوتے ہیں تاہم گھر سے باہر لوگوں کی موجودگی میں یہ خارش شرمندگی کا باعث بھی بن سکتی ہے خاص طور پر خشکی اور جوئیں باہر نکلنا تو شرم سے پانی پانی بھی کرسکتا ہے۔ سر کی خشکی سے بال جھڑنے لگتے ہیں، چہرے پر کیل مہاسے نکل آتے ہیں اور بال قبل از وقت سفید ہوجاتے ہیں جس سے انسان کی شخصیت متاثر ہوتی ہے اور وہ احساس کمتری میں مبتلا ہو جاتا ہے۔ سر کی خشکی دوسروں کا ہیئر برش، صابن اور تولیہ استعمال کرنے سے پھیلتی ہے۔ طبی ماہرین کے مطابق خشکی سے نجات پانا اتنا مشکل نہیں جتنا سمجھا جاتا ہے تاہم اس کا علاج ابتدائی مرحلے میں ہی کر لینا چاہئے۔ ایسے افراد جنہیں سر میں خشکی کی شکایت ہو وہ گھر میں موجود اشیاسے ہی علاج کرسکتے ہیں۔

 دہی اور کالی مرچ:

گھریلو اشیاسے بنی دوائیں نہ صرف سستی اور مضر کیمیائی اثرات سے پاک ہوتی ہیں بلکہ یہ موثر بھی ہیں۔ یہ طویل عرصے تک آپ کو خشکی سے نجات دلاتی ہیں۔ دہی خشکی کے خاتمے کیلئے بہت ہی موثر ہوتا ہے۔ ایک کپ دہی میں دو چمچے پسی ہوئی کالی مرچ ملا کر اسے سر پر لگا کر ہلکا سا مساج کریں اور پھر ایک گھنٹے بعد شیمپو سے دھو لیں۔ نیم گرم زیتون کا تیل سر کے متاثرہ حصے پر باقاعدگی سے لگانے سے بھی خشکی ختم ہو جاتی ہے۔

انڈے اور پیاز:

انڈے نہ صرف خشکی کا خاتمہ کرتے ہیں بلکہ خشک بالوں کیلئے بہترین کنڈیشنر کا کام بھی کرتے ہیں اور بالوں میں رونق اور چمک بھی لاتے ہیں۔ جراثیم کش خصوصیت کی حامل نیم کا پیسٹ سر پر لگانے سے خشکی کے ساتھ ساتھ جوؤں کا خاتمہ اور دیگر جلدی امراض کے علاج میں مدد فراہم کرتا ہے۔ پیاز میں بھی قدرتی طور پر خشکی کے خاتمے کی خاصیت پائی جاتی ہے۔ بالوں سے پیاز کی بو ختم کرنے کیلئے لیموں کے رس کا استعمال مفید ہوتا ہے۔

اس تکلیف سے نجات حاصل کرنے کیلئے چند سادہ مگر دلچسپ ٹوٹکے بہت مددگار ثابت ہوتے ہیں جو پیش خدمت ہیں۔

اسپرین کی دو گولیاں:

اسپرین ایسے اجزایعنی سیلی کائی لیک ایسڈ سے بھرپور دوا ہے جو بیشتر خشکی سے نجات دلانے والے شیمپوز کا حصہ ہوتے ہیں۔ اسپرین کی 2 گولیوں کو پیس کر سفوف کی شکل دیں اور سر پر لگانے کیلئے جتنا شیمپو لیتے ہیں اس میں شامل کرلیں، اس مکسچر کو اپنے بالوں پر ایک سے دو منٹ تک لگا رہنے دیں اور پھر اچھی طرح دھولیں، اس کے بعد پھر سادہ شیمپو سے سر کو دھوئیں آپ اس کا اثر دیکھ حیران رہ جائیں گے۔

کھانے کا سوڈا:

آپ کا باورچی خانہ اپنے اندر سر کی خارش اور خشکی ختم کرنے کی کنجی چھپائے ہوئے ہوتا ہے۔ بس اپنے بالوں کو گیلا کریں اور پھر اس میں مٹھی بھر کر کھانے کا سوڈا زور سے رگڑیں، شیمپو کو چھوڑ کر بالوں کو دھولیں۔ یہ سوڈا خشکی کا باعث بننے والے عناصر کو متحرک ہونے سے روکتا ہے۔ ہوسکتا ہے کہ سوڈے سے دھونے کے بعد پہلے آپ کے بال خشک محسوس ہو مگر کچھ ہفتوں بعد آپ کے بال قدرتی تیل پیدا کرنے لگیں گے جس سے وہ نرم اور خشکی سے پاک ہوجائیں گے۔

سیب کے عرق کا سرکہ:

بالوں کے ماہرین کا دعویٰ ہے کہ سیب کے عرق کا سرکہ سر کی خشکی کا بہترین حل ہے کیونکہ اس میں پائی جانے والی تیزابیت سر میں ایسی تبدیلیاں لاتی ہیں کہ وہاں خشکی کے پیدا ہونا مشکل ہوجاتا ہے۔ ایک چوتھائی کپ اس سرکے کو چوتھائی کپ پانی سے بھری اسپرے بوتل میں شامل کریں اور اپنے سر پر چھڑکاؤ کریں۔ اپنے سر پر تولیہ لپیٹ لیں اور پندرہ منٹ سے ایک گھنٹے تک آرام سے بیٹھ جائیں جس کے بعد سر کو معمول کے مطابق دھولیں۔ یہ عمل ہفتہ بھر میں دو بار کرنا خشکی کو ہمیشہ کیلئے بھگا دے گا۔

مائوتھ واش:

بہت زیادہ خشکی کا علاج چاہتے ہو تو پہلے اپنے بالوں کو معمول کے شیمپو سے دھوئیں اور پھر انہیں ماؤتھ واش سے دھولیں جس کے بعد ہیئر کنڈیشنر کا بھی استعمال کریں۔ ماؤتھ واشنر میں پھپھوندی کو دور بھگانے والی خوبی خشکی کی روک تھام کرتی ہے۔

ناریل کا تیل:

ناریل کا تیل خشکی کا آزمودہ اور موثر علاج ثابت ہوتا ہے جبکہ اس کی مہک مزاج پر ناگوار بھی نہیں گزرتی۔ نہانے سے پہلے تین سے پانچ چائے کے چمچ ناریل کے تیل سے سر کی مالش کریں اور ایک گھنٹے تک لگا رہنے دیں۔ اس کے بعد سر کو شیمپو سے دھولیں، اس کے علاوہ آپ ایسا شیمپو استعمال کرکے بھی اس کی افادیت کو دوگنا بڑھا سکتے ہیں جس میں ناریل کے تیل کا استعمال بھی ہوتا ہو۔

لیموں کا عرق:

خشکی سے نجات پانے کیلئے دو چائے کے چمچ لیموں کے عرق یا جوس کی مالش اپنے سر پر کریں اور پانی سے دھولیں۔ اس کے بعد ایک چائے کا چمچ لیموں کا جوس ایک کپ پانی میں ملائیں اور اپنے سر کو اس سے بھگولیں۔ اس طریقہ کار کو روزانہ اس وقت استعمال کریں جب تک خشکی کا خاتمہ نہ ہوجائے۔ لیموں میں موجود تیزابیت آپ کے سر پر ہائیڈروجن کی سطح کو متوازن رکھتی ہے جس کے نتیجے میں خشکی کو دور بھاگنا پڑتا ہے۔

نمک کااستعمال:

شیمپو سے پہلے عام نمک کو سر پر رگڑنا یا مالش خشکی کا خاتمہ کرنے میں زبردست کردار ادا کرسکتا ہے۔ نمک دانی کو لیں اور کچھ مقدار میں نمک اپنے سر پر چھڑکیں اور پھر اسے بالوں میں پھیلالیں جس کے بعد کچھ دیر مالش کریں۔ کچھ دیر بعد سر کو شیمپو سے دھو کر حیرت انگیز اثر محسوس کریں۔

ایلوویراکی ٹھنڈک:

اپنی خارش کو دور بھگانے کیلئے شیمپو سے پہلے ایلو ویرا کے تیل یا جیل کی مالش کریں۔ آلو ویرا میں ٹھنڈک کا عنصر خارش سے نجات دلانے میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔

لہسن کا کمال:

لہسن کی پھپھوندی کی روک تھام کی خاصیت اس خشکی کا باعث بننے والے بیکٹریا کے خاتمے کیلئے بھی بہترین ثابت کرتی ہے۔ لہسن کو پیس کر اپنے سر پر مل لیں، اس کی بو سے بچنے کیلئے اس پیسے ہوئے لہسن میں شہد بھی شامل کرلیں اور پھر سر کی مالش کریں جس کے بعد سر کو معمول کے مطابق دھولیں۔

زیتون کا تیل:

رات کو زیتون کے تیل کی مالش کرکے سو جانا خشکی کا صدیوں پرانا ٹوٹکا ہے، زیتون کے تیل کو سر پر ٹپکا کر اس کی مالش کریں اور سوجائیں۔ صبح اٹھ کر سر کو دھولیں کچھ دنوں میں خشکی آپ سے دور بھاگ جائے گی، تاہم فوری اثر چاہتے ہیں تو ایسے شیمپو کو ترجیح دیں جس میں زیتون کا تیل بھی شامل ہو۔ واضح رہے کہ مخصوص حالات میں اطبا سے رجوع کئے بغیر مذکورہ بالا کسی عمل کو طریقہ علاج نہ سمجھیں۔